نیوزی لینڈ کی سابق وزیراعظم عہدہ چھوڑنے کے بعد اب کیا کرنے والی ہیں؟

جیسنڈا آرڈرن نے جنوری 2023 میں نیوزی لینڈ کے وزیراعظم کا عہدہ چھوڑ دیا تھا اور اب انہوں نے ایک یونیورسٹی میں داخلہ لے لیا ہے۔

جیسنڈا آرڈرن امریکا کی ہارورڈ یونیورسٹی میں لیڈر شپ، گورننس اور آن لائن انتہا پسندی کے موضوعات پڑھنے کے ساتھ ساتھ ان پر بات بھی کریں گی۔

وہ ہارورڈ کے کینیڈی اسکولز سینٹر فار پبلک لیڈر شپ اور بیکر مین کلائن سینٹر فار انٹرنیٹ اینڈ سوسائٹی میں جوائنٹ فیلو شپ پروگرام کا حصہ بن رہی ہیں۔

اس فیلو شپ کا آغاز موسم خزاں میں ہوگا اور وہ اس وقت نیوزی لینڈ سے باہر ہوں گی جب اکتوبر میں ان کے ملک میں عام انتخابات ہوں گے۔

اس حوالے سے جیسنڈا آرڈرن نے بتایا کہ ‘اگرچہ میں یونیورسٹی میں ہونے کی وجہ سے ملک میں نہیں ہوں گی، مگر فیلو شپ کے اختتام پر واپس آجاؤں گی’۔

وہ اس سے قبل 2022 میں ہارورڈ یونیورسٹی جا چکی ہیں جہاں انہیں اعزازی ڈاکٹریٹ کی ڈگری دی گئی تھی۔

نیوزی لینڈ کی سابق وزیر اعظم ہارورڈ یونیورسٹی میں آن لائن انتہا پسندانہ مواد کی جانچ پڑتال اور معیار کو بہتر بنانے کے طریقوں کی تعلیم حاصل کریں گی جبکہ آرٹی فیشل انٹیلی جنس گورننس کا تجزیہ بھی کریں گی۔

اس کے ساتھ ساتھ وہ برطانیہ کے شہزادہ ولیم کے ارتھ شاٹ پرائز کے بورڈ میں بھی اپنا کام جاری رکھیں گی۔

بیکر مین کلائن سینٹر کے شریک بانی پروفیسر Jonathan Zittrain نے بتایا کہ ایسا بہت کم ہوتا ہے کہ ایک ریاست کی سربراہی کرنے والی شخصیت فرائض سے سبکدوشی کے بعد ڈیجیٹل پالیسی کے مسائل کو جاننے کے لیے گہرائی میں جا کر کام کرے۔

انہوں نے مزید کہا کہ جیسنڈا آرڈرن کی لوگوں اور اداروں کو متحد کرنے کی صلاحیت ہمارے لیے قیمتی ثابت ہوگی۔